کولیسٹرول کی بیماری
امراض،دل کے امراض

کولیسٹرول کی بیماری

02 July, 2020

کولیسٹرول کی بیماری آج کل بہت عام ہے۔ اکثر لوگوں کو چالیس سے پچاس سال کی عمر کے بعد کولیسٹرول کا مرض لاحق ہو جاتا ہے۔ آئیے دیکھتے ہیں کہ کولیسٹرول کی بیماری آخر ہے کیا؟


کولیسٹرول کا کام؟

کولیسٹرول ہمارے جسم میں پائی جانے والی چربی کی ایک قسم ہے جو جسم کے خلیوں کی دیواروں اور جسم کی کارکردگی کو توازن میں رکھنے والے ہارمون بنانے میں استعمال ہوتا ہے۔ جسم اپنی ضرورت کا کچھ کولیسٹرول خوراک سے حاصل کرتا ہے جبکہ باقی مقدار جگر پیدا کرتا ہے۔

 

کولیسٹرول کی بیماری کیا ہے؟

کولیسٹرول کی بیماری خون میں کولیسٹرول اور چربی کی دوسری اقسام کی زیادتی کو کہتے ہیں۔ یہ چربی خون کی نالیوں میں تہہ کی صورت میں جمع ہو سکتی ہے جس سے نالیاں تنگ ہوتے ہوتے بعض اوقات مکمل بند ہو سکتی ہیں۔

 

چونکہ خون جسم کے اعضاء کو آکسیجن اور توانائی پہنچاتا ہے، جسم کے جس بھی حصے میں جب خون کی کوئی نالی بند ہوتی ہے، اس حصے کو آکسیجن ملنا بند ہو جاتی ہے۔ آکسیجن کے بغیر جسم کا وہ حصے مردہ ہو جاتا ہے۔ کولسٹرول کی بیماری جسم کی باقی تمام رگوں سے زیادہ دل کی رگوں کو متاثر کرتی ہے۔ جب بیماری بڑھنے سے دل کے پٹھوں کو خون ملنا بند ہو جائے تو پٹھے مردہ ہو جاتے ہیں۔ دل کے پٹھوں کے مردہ ہونے کے اس عمل کو ہم دل کے دورے کے نام سے جانتے ہیں۔


علاج ضروری ہے۔۔۔

جیسا کہ ہم نے اوپر ذکر کیا کہ کولیسٹرول کی بیماری دل کے دورے کا موجب ہو سکتی ہے، اس لئے اس سے بچاؤ اور اس کا علاج بہت ضروری ہے۔


پرہیز علاج سے بہتر ہے

ولیسٹرول عموما چکنی ، تلی ہوئی چیزوں اور سرخ گوشت (چھوٹا اور بڑا گوشت) میں پایا جاتا ہے۔ ان اشیا ء کے زیادہ استعمال سے کولیسٹرول کی بیماری ہو سکتی ہے۔ ہمیں چاہئیے ہم ان اعتدال کے ساتھ ان غذاؤں کا استعمال کریں۔

ورزش کرنے اور وزن کم کرنے سےجسم کے اندر موجود چربی پگھلتی ہے اور خون کی نالیوں میں جمع نہیں ہوتی۔ باقاعدگی سے ورزش کرنا کولیسٹرول کی بیماری سے بچنے کا مؤثرطریقہ ہے۔


دوائیاں
اگر کسی کو کولیسٹرول کا مرض لاحق ہو جائے تو ورزش اور خوراک میں تبدیلی کے ساتھ ساتھ دوا لینا بھی ضروری ہوتا ہے تا کہ خون میں کولیسٹرول خطرناک حد تک بڑھ نہ جائے۔ یہ دوائیں شوگر اور بلڈ پریشر کی دواؤں کی طرح عموما بقیہ ساری زندگی لینی ہوتی ہیں۔ ان دواؤں سے بچنے کے لئے ضروری ہے کہ ہم آج ہی سے اپنی خوراک میں تبدیلی لائیں اور ورزش کو اپنا معمول بنائیں۔

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ مطلوبہ فیلڈز کو نشان لگا دیا گیا ہے *