کمر کا درد
امراض،ہڈیوں کے امراض

کمر کا درد

11 July, 2020

کمر درد کی اقسام

کمر کا درد نوجوانوں اور بوڑھوں میں یکساں طور پر عام پائی جانے والی شکایت ہے. مختلف عمر اور جسامت کے افراد میں کمر درد کی وجوہات بھی مختلف ہوتی ہیں. عام طور پر کمر درد کو تین بڑی اقسام میں تقسیم کیا جاتا ہے:

   پٹھوں سے منسلک

   ریڑھ کی ہڈی سے منسلک

   نسوں/ اعصاب سے منسلک

 

ریڑھ کی ہڈی اور کمر کے پٹھوں کی ساخت

ریڑھ کی ہڈی انسان کے جسم کے مرکزی ستون کی حیثیت رکھتی ہے. یہ اٹھتے بیٹھتے اور چلتے پھرتے وقت جسم کو سہارا فراہم کرتی ہے. ریڑھ کی ہڈی ایک مینار نما ڈھانچہ ہے جو 33 چھوٹے چھوٹے مہروں سے بنی ہوتی ہے. ان مہروں کی مثال اینٹوں کی سی ہے جو ایک دوسرے کے اوپر بیٹھی ہوتی ہیں. ہر مہرے کے نیچے ایک گول گدی ہوتی ہے جو اس کو اپنے سے نیچے والے مہرے سے رگڑ کھانے سے بچاتی ہے. مہروں کے درمیان بنے جوڑوں میں محدود لچک ہوتی ہے جو ریڑھ کی ہڈی کو مڑنے اور خم کھانے کی صلاحیت دیتی ہے. رِیڑھ کی ہڈی کے مہروں کے درمیان اور کمر کے اطراف میں پٹھے ہوتے ہیں جو کمر کو ہلانے کا کام کرتے ہیں۔

 

ریڑھ کی ہڈی اندر سے کھوکھلی ہوتی ہے اور اس کے اندرونی حصے میں انسان کا حرام مغز ہوتا ہے جو دماغ اور جسم کے اعضاء کے درمیان رابطے کا کام کرتا ہے. ریڑھ کی ہڈی کے اندر بسنے والا حرام مغز ساخت میں کسی جانور کی دم جیسا ہوتا ہے جس سے نسیں نکل کر جسم کے اعضاء تک جاتی ہیں. یہ نسیں مہروں کے درمیان پائے جانے والے خلا کے راستے ریڑھ کی ہڈی سے نکلتی ہیں اور گوشت پوست سے ہوتی ہوئی مختلف اعضاء تک پہنچتی ہیں.

 

پٹھوں سے منسلک درد

جو لوگ بہت زیادہ وزن اٹھاتے ہوں یا جھک کر کام کرتے ہوں، ان کے کمر کے پٹھوں پر بہت زیادہ دباو پڑتا ہے۔ جن لوگوں کو وزن اٹھانے کی عادت نہ ہو، ان کو بھی کبھی کوئی بھاری چیز اٹھانے سے پٹھوں کا اکڑاو ہو سکتا ہے۔ پٹھوں سے منسلک درد کمر درد کی سب سے عام وجہ ہے۔ ریسیرچ کے مطابق کمر درد کے ۸۰ فیصد سے زائد کیسز پٹھوں سے منسلک ہوتے ہیں۔ خاص کر نوجوانوں اور ادھیڑ عمر افراد میں یہ کمر درد کی سب سے بڑی وجہ ہے۔

 

ریڑھ کی ہڈی سے منسلک  درد

عمر کے ساتھ ساتھ مہروں کے جوڑوں کی لچک کم ہو جاتی ہے جس سے کے باعث اٹھتے بیٹھتے ہوئے کمر میں تکلیف ہو سکتی ہے. ریڑھ کی ہڈی سے منسلک درد عموما بزرگوں اور خاص کر بزرگ خواتین میں پایا جاتا ہے۔

 

نسوں/ اعصاب سے منسلک درد (شیاٹیکا یا عرق النساء)

بعض اوقات ریڑھ کی ہڈی پر زیادہ وزن اٹھانے یا جھک کر کام کرنے سے اس قدر دباو آتا ہے کہ ریڑھ کی ہڈی کے درمیان موجود نرم گدی اپنی جگہ سے نکل کر ایک طرف کو پھسل جاتی ہے۔ اگر یہ گدی پھسل کر حرام مغز سے نکلنے والی نسوں پر دباوڈالے تو اس سے کمر درد کی شکایت ہو سکتی ہے۔ چونکہ یہ نسیں اکثر ٹانگوں سے درد اور چھونے کی حس کے سگنل لے کر جاتی ہیں، اس لئے ان نسوں پر آنے والے دباو کو دماغ ٹانگ کے درد کے طور پر محسوس کرتا ہے۔ اگر ان نسوں پر زیادہ عرصے تک دباو رہے یا نسیں مکمل طور پر ناکارہ ہو جائیں تو ٹانگ میں کمزوری بھی آ سکتی ہے اور چلنے پھرنے، اٹھنے بیٹھنے کی صلاحیت متاثر ہو سکتی ہے۔

 

پٹھوں سے منسلک کمر درد کا علاج

پٹھوں سے منسلک درد کے لئے درد کی عام دوائیاں استعمال کی جاتی ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ ایسی دوائیاں جو اکڑے ہوئے پٹھوں کو ڈھیلا کرنے والی ادویات بھی استعمال ہو سکتی ہیں۔

عام طور پر یہ سمجھا جاتا ہے کہ کمر درد کے علاج کے لئے کچھ دن آرام کی ضرورت ہوتی ہے مگر تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ جو لوگ کام سے کچھ دن کی چھٹی لے کر آرام کریں، ان میں کمر درد زیادہ دن تک جاری رہ سکتا ہے۔ اس لئے ڈاکٹر پٹھوں سے منسلک کمر درد کے لئے درد کی دوائیوں کے ساتھ ہلکی ورزش اور کام کو جاری رکھنا بہترین لائحہ عمل ہے۔ تاہم کمر درد کا شکار لوگوں کو بھاری وزن اٹھانے سے پرہیز کرنا چاہئیے اور اگر درد کئی ہفتوں تک جاری رہے تو ڈاکٹر سے مشورہ کرنا چاہئیے۔

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ مطلوبہ فیلڈز کو نشان لگا دیا گیا ہے *

TalhaRafiq

testing comment