کالا موتیا
امراض،آنکھوں کے امراض

کالا موتیا

کالا موتیا، جس کو طبی زبان میں گلاکوما کہا جاتا ہے، امراض چشم میں خصوصی اہمیت کا حامل ہے۔  یہ بیماری خصوصا بڑی عمر کے افراد میں بہت عام ہے، اور مناسب علاج کے بغیر یہ مرض بینائی کو متاثر کرتا ہے اور بعض اوقات مریض کی قوت بینائی کو مکمل طور پر ختم بھی کر سکتا ہے۔

 

کالاموتیا کیا ہے؟

سادہ لفظوں میں کالا موتیا آنکھ کے اندرونی حصے میں پائے جانے والے پانی نما مادے کے پریشر میں اضافہ ہونے کے باعث ہوتا ہے۔ اگر اس پریشر کو علاج کے ذریعے کم نہ کیا جائے، تو متاثرہ آنکھ کی قوت بینائی شدید متاثر ہو سکتی ہے۔ کالاموتیا بیک وقت دونوں آنکھوں میں بھی ہو سکتا ہے، تاہم ایک آنکھ دوسری آنکھ سے زیادہ متاثر بھی ہو سکتی ہے۔

 

وجوہات

بنیادی طور  پر گلاکوما کی دو وجوہات ہو سکتی ہیں:

1.     پرائمری گلا کوما – اس قسم کے گلا کوما کی وجہ غیر معلوم ہوتی ہے۔

2.     سیکنڈری گلاکوما – اس قسم کے گلا کوما کی وجوہات میں ذیابیطس ، سفید موتیا اور آنکھ کا ٹیومر وغیرہ شامل ہیں

 

گلاکوما کی اقسام

گلاکوما کے بارے میں مکمل معلومات کے لیے گلا کوما کی دو منفرد اقسام کے بارے میں جاننا ضروری ہے:

 

اکیوٹ / کلوز اینگل گلاکوما: 

یہ گلا کوما اچانک نمودار ہوتا ہے اور مریض کو متاثرہ آنکھ میں شدید تکلیف اور جلن ہوتی ہے۔ اس کے علاوہ مریض کی نظر میں بھی اچانک بدلاؤ آجاتا ہے۔

 

کرانک / اوپن اینگل گلاکوما:

 گلا کوما کی یہ قسم طویل المدتی ہوتی ہے اور مریض میں بتدریج نمودار ہوتی ہے۔ ابتدا میں کسی قسم کی علامات ظاہر نہیں ہوتیں۔ لہذا مریض علامات نہ ہونے کے باعث کسی قسم کی طبی مدد لینے سے گریز کرتا ہے، اور یہ بیماری  پوشیدگی میں بڑھتی جاتی ہے۔

 

گلاکوما کی علامات

   متاثرہ آنکھ میں ناقابل برداشت تکلیف

   نظر کا دھندلا جانا

   آنکھ میں درد کے ساتھ متلی محسوس ہونا

   بند آنکھوں لکے باوجود تیز رنگ کے شرارے نظر آنا

   آنکھوں کا سرخ مائل ہو جانا

 

واضح رہے کہ مندرجہ بالا علامات صرف اکیوٹ گلا کوما میں دیکھنے کو ملتی ہیں۔ اس کے برعکس کرانک گلاکوما میں صرف قوت بینائی میں مخصوص قسم کے نقص ہی واضح ہوتے ہیں، جن میں سب سے عام نقص  "ٹنل ویژن" ہے ۔

 

تشخیص

گلاکومہ کی تشخیص علامات اور آنکھوں کے مکمل معائنے کی بنا پر کی جاتی ہے۔ اس کے علاوہ متاثرہ آنکھ کا پریشر جانچنے کے لیے ایک آلہ بھی استعمال کیا جاسکتا ہے جس کو " ٹونومیٹر "کہتے ہیں۔

 

علاج

اگر آپ کو لگتا ہے کہ آپ میں کالے موتیا کی علامات نمودار ہو رہی ہیں تو فوراً اپنے ڈاکٹر سے رجوع کیجئے۔اکیوٹ گلا کوما ایک میڈیکل ایمرجنسی، یعنی کہ ہنگامی صورت حال ہے۔ اس کے لئے مریض کو جلد سے جلد ہسپتال کا رخ کرنا چاہیے۔ گلا کوما کے علاج میں وہ ادویات شامل ہیں جو آنکھ میں بننے والے پانی کی پیداوار کو کم کرتی ہیں، یا اس پانی کے اخراج کو بڑھاتی ہیں۔ اس طرح آنکھ کے اندر موجود پریشر میں واضح کمی کی جاسکتی ہے۔ گلا کومہ کی زیادہ تر ادویات آنکھ کے قطروں یعنی "آئی ڈراپس" کی شکل میں دستیاب ہیں۔

 

سرجری

اگر مندرجہ بالا ادویات سے گلاکوما کی شدت میں کمی نہ آئے،  یا مریض کی اپنی خواہش ہو، تو آنکھوں کا سرجن گلاکوما کے لیے خاص سرجری بھی کر سکتا ہے۔ اس سرجری کا بنیادی مقصد متاثرہ آنکھ کے پریشر کو کم کرنا ہوتا ہے۔ آجکل لیزر کے ذریعے بھی گلاکوما کی سرجری ممکن ہے۔

 

گلاکوما سے بچاؤ

   ذیابیطس سے متاثرہ افراد کو خون میں شوگر کی سطح کا خاص خیال رکھنا چاہیے۔

   60 سال سے زائد عمر کے افراد کو اپنی آنکھوں کا سالانہ معائنہ کرانا چاہیے۔

   اگر کسی فرد کو اپنی بینائی میں تبدیلیاں محسوس ہو رہی ہیں، تو ڈاکٹر سے رجوع کرنا چاہیے تاکہ گلا کوما کی بروقت تشخیص ہو سکے۔

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ مطلوبہ فیلڈز کو نشان لگا دیا گیا ہے *